Epaper Editions
سہارا گروپ کے تمام مسائل دورہو جائیں گے اسی سال: سہارا شری
 27
14 Feb, 2020 12:07 pm

 

نئی دہلی: ہر مسئلے کا منھ توڑ جواب دینے والےسہارا گروپ کو امید ہے کہ سال 2020 اس کے لئے راحت بھرا ہو گا اور اس کی تمام پریشانیاں اس سال دور ہو جائیں گی۔ سہارا انڈیا پریوار کے منیجنگ ورکر وچیئرمین سہارا شری سبرت رائے سہارا نے بھروسہ جتایا ہے کہ گروپ کے تمام مسئلے اس سال سلجھ جائیں گے۔
سہارا شری نے بدھ کو کہا کہ گروپ کے رئیل اسٹیٹ اور شہری ترقی کاروبار میں دو بڑے غیر ملکی سرماےہ کاروں کو ساتھ جوڑا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سیکورٹیز اینڈ ایکسچینج بورڈ آف انڈیا (سیبی) کے پاس جو 22000 کروڑ روپے جمع کرائے گئے ہیں وہ بھی آخر کار واپس آ جائیں گے۔ سہاراشری نے سہارا کے سبھی سرمایہ کاروں کو بھی بھروسہ دلایا ہے کہ انہیں ان کا سرمایہ پورے سود کے ساتھ ملے گا۔ ایک دن کی تاخیر ہونے پر بھی انہیں اضافی سود دیا جائے گا۔ یکم فروری کوگروپ کے 42 ویں یوم تاسیس کے موقع پر سرمایہ کاروں کو لکھے خط میں سہارا شری نے کہا کہ گروپ نے ہمیشہ وقت پر ادائےگی اور خدمات میں خصوصیت کی اپنی روایت کو قائم رکھا ہے۔ کچھ ناخوشگوار صورتحال کی وجہ سے گزشتہ کچھ سال کے دوران کچھ مقامات پر ادائیگی میں تاخیر ہوئی ہے ۔
پونجی بازار ریگولےٹری سیبی کے ساتھ گروپ کی دو کمپنیوں کے ذریعہ بانڈ جاری کر کے جمع کی گئی رقم کے معاملہ میں ریگولیشن سے متعلق تنازع پرسہارا شری نے کہا کہ سپریم کورٹ کے ذریعہ جاری’ امبارگو‘ کی وجہ سے املاک کی فروخت یا اسے گروی رکھ کر حاصل کی گئی پوری رقم کو سیبی-سہارا اکاﺅنٹ میں جمع کرایا گیا ہے۔ سہارا شری نے لکھا ہے کہ ’اس مےں سے ہم اےک روپیہ بھی ادارہ کے کام کاج یا سرمایہ کاروں کی ادئیگی پر خرچ نہیں کر سکتے ہیں۔‘ سہارا شری نے بھروسہ جتایا ہے کہ مسئلے جلد سلجھ جائیں گے، کیوں کہ دو معتبر غیر ملکی سرمایہ کاروں کو جوڑا گیا ہے، جن کے پاس بڑا سرمایہ ہے۔ یہ دو سرمایہ کار ہمارے رئیل اسٹیٹ اور شہری ترقی کاروبار میں سرمایہ کاری کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ کی ہدایت کے پیش نظر کچھ معاہدہ کئے گئے ہیں، جس سے 2020 میں سہارا کی تمام پریشانیاں دور ہو جائیں گی۔
قابل ذکر ہے کہ سےبی نے 2011 مےں سہارا انڈےا رئےل اسٹےٹ کارپورےشن لمےٹڈ( اےس آئی آر ای سی اےل) اور سہارا ہاﺅسنگ انویسٹمنٹ کارپوریشن (ایس ایچ آئی سی ایل) کو3 کروڑ سرمایہ کاروں سے متبادل مکمل طور پر قابل تبدیل بانڈ (او ایف سی ڈی) کے ذریعہ جمع کی گئی رقم کو لوٹانے کی ہدایت دی تھی۔ اپیلوں اور جوابی اپیلوں کے طویل عمل کے بعد سپریم کورٹ نے 31 اگست 2012 کو سیبی کی دونوں کمپنیوں کو سرمایہ کاروں کا پیسہ 15 فیصد سود کے ساتھ لوٹانے کے حکم کو جائز ٹھہرایا۔ سہارا کو آخر کار سیبی کے پاس سرمایہ کاروں کا پیسہ لوٹانے کےلئے 24 ہزار کروڑ روپے جمع کرانے کا حکم دیا گیا، تاہم سہارا گروپ ہمیشہ یہی کہتا رہا ہے کہ یہ دوہری ادائیگی ہو گی، کیونکہ گروپ پہلے ہی 95 فیصد سے زیادہ سرمایہ کاروں کا پیسہ براہ راست انہیں لوٹا چکا ہے۔
 

Original text