23:51:21

کشی نگر : سینچائی پربحران برقرار، نیپال کے ساتھ میٹنگ بے نتیجہ
 91
22 May, 2020 06:15 pm

کشی نگر: اترپردیش کے ضلع کشی نگر میں سینچائی کے سب سے اہم ذریعہ 'گنڈک نہر' میں پانی چھوڑے جانے پر ابھی تذبذب برقرار ہے۔ 
ہندوستان و نیپال کے افسران کے درمیان جمعہ کو ہوئی میٹنگ میں بیراج کی مرمت کے لئے سرحد عبور کرنے کے معاملے پر رضا مندی نہیں ہوپائی۔ مرمت کے بغیر 
نہر میں پانی چھوڑنے سے پانی کو قابو میں کرنے میں دقت آسکتی ہے۔ اور یہ خطرہ بارش کے وقت سیلاب کی شکل میں مزید بڑھ سکتا ہے۔ 
گنڈک بیراج کے ایگزیکٹو انجینئر محمد جمیل احمد نے جمعہ کو بتایا کہ ہندوستان۔نیپال کے انجینئروں اور افسران کی ایک میٹنگ گنڈک بیراج کے 36نمبر پھاٹک کے نزدیک 
نیپال علاقے میں منعقد ہوئی۔ انہوں نے بتایا کہ 24مئی سے مین مغربی گنڈک نہر کے لئے پانچ ہزار کیوسک کے ساتھ ہی بیتیا ڈویژن و سورج پورا پاور ہاوس کے لئے 
پانی کا مطالبہ کیا گیا ہے۔ اس کے لئے نیپالی علاقے میں مرمت کے کام کے لئے مشین اور مزوروں وغیرہ کے آمدورفت کی ضرورت ہے۔ 
انہوں نے بتایا کہ نیپال کے نولپراسی ضلع کے سی ڈی او سے اس معاملے میں کئی بار خط وکتابت کیا گیا تاکہ وقت سے کٹاؤ مخالف کام سمیت دیگر مرمت کام کو پورا 
کرکے نہروں میں سینچائی کے لئے پانی چھوڑا جاسکے۔ وہیں بیراج کے خستہ حال تین پھاٹکوں کو بدل کر پل کو بھی محفوظ کرنے کا کام کیا جاسکے۔ نیپال کے افسران 
نے کورونا انفیکشن و سرحد سیل ہونے کا حوالہ دیتے ہوئے آمدورفت کی اجازت نہیں دی۔

Original text