23:51:21
دہلی یوتھ ویلفیئر ایسوسی ایشن کے زیرِ اہتمام جلسہ تقسیمِ انعامات
 822
05 Jan, 2020 08:05 pm

نئی دہلی۔:05 جنوری 2019 فصیل بند شہر کی مشہور و معروف سماجی تنظیم دہلی یوتھ ویلفیئر ایسوسی ایشن (ڈائیوا)نے آج ہندی بھون میں سکنڈری اور سینئر سکنڈری سطح کے بورڈ امتحانات میں امتیازی نمبرات حاصل کرنے والے طلبہ وطالبات کے اعزاز میں ایک جلسے کا اہتمام کیا۔

تقریب کے دوران بارہویں جماعت میں 98.7 فیصد نمبر حاصل کرنے والی ثناء نیاز اور ایس کے وی نمبر 2 کی طلبہ ثناء اور سہانہ کو اردو مضمون میں 98 فیصد نمبرات حاصل کرنے کے لیے گیارہ گیارہ ہزار روپے کے نقد انعامات سے بھی نوازا گیا۔ 

اس دوران دہلی خواتین کمیشن کی چئیرپرسن سواتی مالیوال کے ذریعہ کیے گئے ان کے انقلابی کاموں کے لیے انہیں اعزاز سے نوازا گیا اس کے علاوہ پرانی دہلی میں اپنی تعلیمی و ثقافتی سرگرمیوں کے لیے مشہور فاطمہ اکادمی بھی اعزاز سے نوازا گیا.

 اس تقریب کی صدارت ہمالیہ ڈرگز  کے صدر سید فاروق نے کی انہوں نے اپنے صدارتی خطبہ میں کہا کہ اللہ تعالیٰ نے انسان کو اظہار کی قوت عطاء کی ہے اس سے مستفید ہونا چاہیے انہوں نے طلباء کو تاقید کرتے ہوئے ایک شعر پڑھا..
'قناعت مقدر پہ نادان مت کر
مشقت کو اپنا مقدر بنا لے'

مہمان خصوصی کے طور پر شرکت کرنے آئی دہلی خواتین کمیشن کی چیئرپرسن سواتی مالیوال نے دہلی یوتھ ویلفیئر ایسوسی ایشن کے کاموں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ وہ ملک میں بڑھتی آبروریزی کی وارداتوں سے پریشان ہیں انہوں نے مطالبہ کیا کہ چھوٹی بچیوں کے ساتھ جنسی تشدد کرنے والے ملزمان کو پھانسی کی سزا دی جائے، انہوں نے بتایا کہ فاسٹ ٹریک کوٹ بنانے کے لیے مرکزی حکومت نے قانون تو بنایا تھا لیکن اسے ابھی تک نافذ نہیں کیا گیا.
سواتی مالیوال نے عزم لیتے ہوئے کہا کہ یہ لڑائی جاری رہے گی اور ملزمان کو ہر حال میں قانون کے مطابق سزا دلانے کی کوشش کریں گی.

انہوں نے بچوں سے مخاطب ہو کر کہا کہ طاقت دماغ میں ہوتی ہےاگر آپ ذہنی طور پر طاقتور ہیں تو آپ سب کچھ کر سکتے ہیں.سواتی نے طلباء سے کہا کہ روزانہ کم از کم ایک اچھا کام ضرور کریں.

مہمان خصوصی کے طور پر شرکت کرنے آئی معروف صحافی اور مصنفہ صبا نقوی نے  تقریب کے دوران اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ملک کے جو حالات ہیں اس میں تعلیم ہی ہمارا سب سے بڑا ہتھیار ہے.اس کی مدد سے ہم اپنی حفاظت کر سکتے ہیں ورنہ سوشل میڈیا پر تو لوگ صبح و شام گالیاں ہی بکتے رہتے ہیں.انہوں نے جامعہ ملیہ اسلامیہ یونیورسٹی کے طلباء کر ہوئی پولیس کی بربریت پر اپنے ردعمل ظاہر کیا اور شاہین باغ میں جاری خواتین کے احتجاج کو سراہا.

معروف اسلامک اسکالر اور مسلم آبزرور اور کے چیف ایڈیٹر  ڈاکٹر اسلم عبداللہ نے کہا کہ ایک دور تھا جب ہمارے معاشرے میں لڑکیاں تعلیم کے میدان میں کافی پیچھے تھی لیکن اب ہمیں اس بات کی خوشی ہے کہ لڑکیوں میں تعلیم کے تئیں بیداری آئی ہے تاہم اب ہمیں لڑکوں کی تعلیم پر توجہ دینے کی ضرورت ہے.

اس سے قبل ڈائیوا کے جوائنٹ سکریٹری حافط عبدالماجد نے تلاوتِ کلامِ الٰہی سے جلسے کا آغاز کیا اور نائب صدر انور عبداللہ نے ڈائیوا کا مختصر تعارف اور سرگرمیوں پر ایک رپورٹ پیش کی۔ پروگرام کے آخر میں صدر محمد نعیم نے مہمانوں، والدین ، طلبہ، شرکاء اور ایسوسی ایشن کے عہدیداران و ممبران کا شکریہ ادا کیا۔  
اس موقع پر ایسوسی ایشن کے سرپرست، مشیر، عہدیداران و ممبران اور انعام یافتگان کے والدین و رشتہداروں کے ساتھ ساتھ بڑی تعداد میں دہلی کی معتبر شخصیات نے بھی شرکت کی۔

 اس موقع پر دہلی اردو اکادمی کے ممبر فریدالحق وارثی، فاطمہ اکیڈمی کے صدر اعجاز نور، بے گھروں کے لیے کام کرنے والی غیرسرکاری تنظیم مرہم کے صدر ارتضیٰ قریشی وغیرہ کے نام خصوصی طور پر قابلِ ذکر ہیں۔

Original text