23:51:21
گورنمنٹ پیکیج صرف 3.22 لاکھ کروڑ کے مالیت کا ہے، وزیر اعظم ضرور گفتگو کریں: کانگریس
 175
17 May, 2020 08:49 pm

نئی دہلی: کانگریس نے اتوار کے روز کہا وزیر اعظم نریندر مودی نے 12 مارچ کو معاشی پیکیج کا اعلان کیا اور اس کے بعد وزیر خزانہ نرملا سیترمن نے گذشتہ 5 دنوں میں اس کی وضاحت کی ہے۔ اس پر کانگریس کے راجیہ سبھا رکن آنند شرما نے کہا کہ وزیر خزانہ کے اعلانات میں 12 مئی کو پی ایم مودی کے اعلان کے مطابق 20 لاکھ کروڑ روپے تک کا اضافہ نہیں ہوا ہے۔ آنند شرما نے کہا کہ مرکزی حکومت معاشی پیکیج کے نام پر ملک کے عوام کو گمراہ کررہی ہے۔ انہوں نے کہا ، "وزیر اعظم کو اس پر بات چیت کرنی ہوگی۔" شرما نے کہا، "میں وزیر خزانہ سے پوچھ رہا ہوں، وزیر اعظم سے اختلاف کر رہا ہوں اور حکومت کو چیلینج کر رہا ہوں کہ وہ مجھے ان نمبروں پر غلط ثابت کریں،" انہوں نے مزید کہا کہ وہ وزیر خزانہ کے ساتھ بحث کے لئے تیار ہیں۔ ہزاروں تارکین وطن جو اس وقت شاہراہوں پر سفر کرے ہیں اور اپنے آبائی شہر پہنچنے میں انہیں جو بھی وسائل پیش آتے ہیں، اس پر شرما نے کہا کہ حکومت کو ان غریب شہریوں سے معافی مانگنی ہوگی جس سے ان کے بنیادی اور قانونی حقوق پامال ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا، "وزیر خزانہ کو جواب دینا چاہئے، سوال نہیں۔" انہوں نے مزید کہا ، "منصوبہ بندی کی کمی کی وجہ سے سڑکوں پر چلنے پر مجبور تارکین وطن کی حالت زار پر حکومت کو جواب دینا ہوگا۔"اقتصادی محرک پیکیج کی پانچویں اور آخری پریس کانفرنس میں اتوار کے روز ایم جی این آر جی ایس کے لئے پہلے بجٹ میں 61000 کروڑ روپے سے زیادہ اور روزگار کی گارنٹی اسکیم کے لئے مختص 40،000رقم بڑھا دی گئی ، تاکہ تارکین وطن مزدوروں کو اپنی ریاستوں میں واپس منتقل کیا جاسکے۔ انہوں نے کہا ، اس سے مجموعی طور پر تقریبا 300 کروڑ یومیہ پیدا کرنے میں مدد ملے گی۔ حکومت نے ایک سال کے لئے قرضوں کے نادہندگان پر دیوالیہ کی نئی فائلنگ معطل کرنے کا اعلان بھی کیا اور انشادیت کی دہلیز میں اضافہ کیا کیونکہ یہ صنعت کے لئے کووڈ 19 کے درد کو کم کرنے کے لئے آگے بڑھا ہے۔ انہوں نے ریاستی کنٹرول میں آنے والی کمپنیوں کے لئے ایک نئی پالیسی کا بھی اعلان کیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ غیر اسٹریٹجک شعبے کے تحت عوامی شعبے کے اقدامات کو نجکاری کی جائے گی جبکہ نشاندہی شدہ اسٹریٹجک شعبے میں شامل افراد میں سے کچھ کو ضم کرکے چار سے زیادہ افراد کی مدد کی جاسکے گی۔ واضح رہے کہ پی ایم مودی نے ملک کی معیشت کے مد نظر اپنے گذشتہ خطاب میں معاشی پیکیج کا اعلان کیا تھا جس پر وزیر خزانہ نے مرحلہ وار اعلانات کیے ہیں۔ 
 

Original text