23:51:21
مسترد شدہ خاندان پوری اپوزیشن کی آواز نہیں ہے: نڈا

 520
24 Jun, 2020 05:09 pm

نئی دہلی: گلوان وادی میں ہندوستان اور چین کے فوجیوں کے درمیان جھڑپ کے سلسلے میں وزیراعظم مودی پر تنقید کرنے والی کانگریس اور اس کے لیڈر راہل گاندھی پر بدھ کے روز بی جے پی کے صدر جگت پرکاش نڈا نے جوابی حملہ کرتے ہوئے کہا کہ ایک مسترد کیا گیا خاندان پوری اپوزیشن کی آواز کیسے ہوسکتا ہے۔ نڈا نے آج کئی ٹوئٹ کرکے کانگریس پر زور دار حملے کئے۔ انہوں نے لکھا ’’ایک مسترد کیا گیا خاندان پوری اپوزیشن کے برابر نہیں ہے۔ ایک کنبہ کا مفاد ملک کا مفاد نہیں ہے۔ آج ملک متحد ہے اور ہمارے مسلح دستوں کی حمایت کررہا ہے۔ یہ اتحاد اور یکجہتی کا وقت ہے‘‘۔
 وزیراعظم کے ساتھ چین کے معاملے پر 19 جون کو ہوئی کل جماعتی میٹنگ کا ذکر کرتے ہوئے ایک دیگر ٹوئٹ میں بی جے پی صدر نے کہا کہ اپوزیشن کا حق ہے سوال پوچھنا۔ کل جماعتی میٹنگ میں صحت مند بحث ہوئی تھی۔ میٹنگ میں کئی اپوزیشن لیڈران نے قیمتی مشورے دیئے اور مرکزی حکومت کے ساتھ اس معمالے پر آگے کے اقدامات کے لئے پوری حمایت دی۔ صرف ایک کنبہ الگ رہا۔ 
انہوں نے کہا کہ ’’ایک کنبہ کی غلط پالیسی کی وجہ سے ہم نے ملک کی ہزاروں کلومیٹر زمین گنوا دی۔ سیاچن گلیشیئر تقریباً چلا گیا اور ابھی بہت کچھ ۔۔۔۔ اس لئے کوئی حیرانی کی بات نہیں کہ ملک نے انہیں مسترد کردیا ہے۔
 واضح رہے کہ 15۔16 جون کی شب گلوان میں چینی فوجیوں کے ساتھ جھڑپ میں کرنل سنتوش بابو سمیت 20 جوان شہید ہوگئے تھے۔ چین کے بھی بڑی تعداد میں فوجی مارے جانے کی رپورٹ ہے اگرچہ چین کی طرف سے اس کی باضابطہ تصدیق نہیں کی گئی ہے۔
 اس واقعہ کے بعد وزیراعظم مودی پر راہل گاندھی مسلسل تنقید کررہے ہیں اور انہیں’سریندر مودی‘تک کہا ہے۔
 

Original text