23:51:21
چونتس غیرملکی تبلیغی جماعتیوں کی عرضی پر سماعت سپریم کورٹ میں دوجولائی تک ٹلی
 105
29 Jun, 2020 03:41 pm

نئی دہلی:تبلیغیر جماعت کے پروگرام میں حصہ لینے والے 34 غیر ملکی جماعتیوں کی عرضیوں پر سماعت سپریم کورٹ میں دو جولائی تک کے لئے ٹل گئی ہے۔اس دوران عدالت نے پیر کو مرکزی حکومت کو یہ بتانے کو کہا کہ کیا مرکز آنے والے کسی شخص کا ویزا منسوخ کرنے کا کوئی حکم جاری کیاگیا ہے ۔
عرضی گزاروں میں سے ایک کی جانب سے معاملے کی پیروی کررہے وکیل سی یو سنگھ نے جسٹس اے ایم کھانولکر،جسٹس دنیش مہیشوری اورجسٹس سنجیو کھنہ کی بینچ  کے سامنے دلیل دی ہے کہ 900 جماعتیوں کو بلیک لسٹ میں ڈالنے کےلئے صرف جنرل نوٹ جاری کیاگیا ہے۔
جسٹس کھانولکر نے کہا،’’لیکن وزارت داخلہ کی نوٹیفکیشن کہتی ہے کہ یہ فیصلہ تو افسروں کو الگ الگ معاملوں کی بنیاد پر لیا جانا ہے۔ہمیں یہ پتہ لگانا ہوگا کہ کیا حکم جاری کئے گئے ۔‘‘
اس سے پہلے عرضی گزاروں کی جانب سے عدالت میں دعوی کیا گیا کہ ویزا منسوخ کئے جانےیا بلیک لسٹ میں ڈالے جانے کے سلسلے میں حکومت  کی جانب سے کوئی سرکاری حکم پاس نہیں کیاگیا ہے۔صرف ایک پریس ریلیز  جاری ہوئی اور ان کے پاسپورٹ ضبط کرلئے گئے۔

Original text