23:51:21
کورونا پر ماحول کے اثر کا فی الحال کوئی ثبوت نہیں:ہرش وردھن
 168
11 Oct, 2020 04:12 pm

نئی دہلی: سردی کے موسم میں کورونا بڑھنے کے خدشوں کے درمیان صحت اورخاندانی بہبود کے وزیرڈاکٹر ہرش وردھن نے اتوار کو کہا کہ ابھی تک ایسا کوئی ثبوت سامنے نہیں آیا ہے جس سے یہ پتہ چل سکے کہ ماحول میں ہونے والی تبدیلی کا کورونا پر کوئی اثر پڑتا ہے یا نہیں۔
ڈاکٹر ہرش وردھن نے اتوار کو اپنے’خطابی پروگرام‘میں موسم میں تبدیلی کے دوران جان لیوا عالمی وبا کووڈ 19 کا خطرہ اوربڑھنے کے سلسلے میں ظاہر کئے جارہے خدشات کے سلسلے میں سوالات پر یہ بات کہی۔
انہوں نے اس دوران لوگوں کو آگاہ کیا،’’آپ اسے میری وارننگ سمجھ لیں یا پھر صلاح،لیکن اگر تہواروں کے دوران ہم نے لاپرواہی برتی تو کورونا پھر سے خطرناک شکل اختیار کرلے گا۔ اس لئے میں کہوں گا کہ تہواروں کے دوران’دو گز کی دوری، ماسک ہے ضروری‘پر عمل ضرور کریں۔ باہر جانے کے بجائے گھر پررہ کر گھروالوں کے ساتھ تہوار منائیں ۔‘‘
وزیر صحت نے کہا،’’دنیا کا کوئی بھی مذہب یا خدا یہ نہیں کہتا کہ آپ لوگوں کی زندگی خطرے میں ڈال کر تہوارمنائیں۔ کورونا کے خلاف جنگ کو جیتنے کےلئے ہمیں پی ایم مودی کی عوامی تحریک کو سنجیدگی سے لینا ہوگا۔‘‘
ملک اور دنیا بھر میں خطرناک شکل اختیار کرچکے اس وائرس سے نمٹنے کےلئے ویکسن آنے کے سلسلے میں انہوں نے کہا کہ ملک میں کورونا ویکسن پرماہرین کی اعلی سطحی ٹیم مسلسل لگی ہوئی ہے امید ہے کہ گھریلو سطح پر ویکسن اگلے سال جولائی تک آسکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایک اندازے کے مطابق ملک میں کورونا ویکسن کی پہلی کھیپ میں 40 سے 50 کروڑ خوراک آسکتی ہے۔
واضح رہے کہ کورونا وائرس کے معاملے میں امریکہ کے بعد ملک میں سب سے زیادہ معاملے ہیں۔اتوار کو جاری کورونا وائرس کے اعدادو شمار میں کل متاثرین 70 لاکھ 53 ہزار 807 ہوگئے ہیں۔ اس میں 60لاکھ 77 ہزار 977 نے اس جان لیوا وائرس کو مات دے دی ہے،جب کہ آٹھ لاکھ 67 ہزار 496 ابھی اس سے متاثر ہیں۔وائرس ایک لاکھ آٹھ ہزار 334 مریضوں کی جان بھی لے چکا ہے۔
انہوں نے کہ اگر اس خوراک سے ملک کے تقریباً 25 کروڑ لوگوں کو ویکسن دی جاسکے گی۔حکومت اس بارے میں سنجیدگی سے کوشش کررہی ہے کہ ویکسن آنے کے بعد اسے کس طرح سے لوگوں تک بآسانی پہنچایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ سبھی لوگوں کو ایک جیسی ویکسن دینے کےلئے حکومت توجہ اس پر مرکوز کئے ہوئے ہیں۔ واضح رہے کہ اس وقت ملک میں تین کورونا ویکسن پر کام چل رہا ہے۔

Original text